دیدبان شمارہ ١٢

لاک ڈاون۔۔۔۔۔۔۔جاوید ف روز

روشنی گم ہوئی

آنکھ سے

خواب سے

چاند پھیکا پڑا

کہکشاں

اس سیاہ فام آکاش پہ

ان اندھیروں کی قبروں میں گم ھوگی

جن میں اپنے مقدر کے روشن دنوں کی چمکتی ھوئ

ساری رعنائیاں

لاپتہ ہوگئیں

گھر کے تالاب میں

اب ابھرتا نہیں

عکس مہتاب بھی

ساحلوں پہ پڑی

ریت بھی جگمگاتی نہیں

اب مسافر بھلا

کون سی سمت میں

کون سے شہر میں پاؤں رکھا کریں

سو پڑاؤ میں ھے

موج بھی

وقت بھی

جسم بھی

راہ بھی۔۔۔۔۔!!!

------------

جاوید فیروز

........................

........................

....................

Related Posts

Subscribe

Thank you! Your submission has been received!

Oops! Something went wrong while submitting the form