عالمی تاریخ گواہ ہے کہ جب جب ظلم اور جبر سے زندگی کا دامن تا ر تا ر ہوا ہے قلم کے مجاہدوں نے احتجاج کی ایسی کہانی وقت کی گردشوں پر رقم کی کہ انسانیت شرمسار ہونے سے بچ گئی .یہ قلم کی طاقت ہے جو بغیر تلوار کے دشمن کو زیر کر لیتی ہے . عصری ادب بھی اس سے  مبرا نہیں ہے ..ہما رے ادب میں مزاحمت کا رنگ اس لۓ غالب رہتا ہے کہ دنیا ظالموں سے خالی نہیں رہی . یہ ادب کا وہی رنگ ہے جو یہ ثابت کرتا ہے کہ ہم مردہ قوم نہیں ہیں .. ہم سوچ سکتے ہیں ، ظلم کے خلاف یکجا ہو سکتے ہیں اور وقت کی گردشوں پر وہ تاریخ بھی رقم کر سکتے ہیں جو آنے والے وقتوں میں انسانیت کی راہ ہموار رکھ سکے-

توصیف احمد ملک ایک نوجوان افسانہ نگار اور علم دوست انسان ہیں .آپ کا تعلق .....پنجاب جھیلم  سے ہے  اور آپ انٹیرئیر ڈیزاینر ہیں . آجکل آبھا  میں مقیم ہیں -

Related Posts

Subscribe

Thank you! Your submission has been received!

Oops! Something went wrong while submitting the form